تازہ ترین
پاکستان سٹاک ایکس چینج مارکیٹ میں بہتری ، انڈیکس میں 613پوائنٹس کا اضافہ         آپ کے پاﺅں آپ کی صحت کے بارے میں کیا کہتے ہیں؟ جانئے وہ باتیں جو آپ کو صحت کے بڑے مسئلے سے محفوظ رکھ سکتی ہیں         اگر پیٹ کی چربی پگھلانا چاہتے ہیں تو یہ ایک مشروب روزانہ استعمال کریں         نئی دلی، خود کو نیشنل کبڈی کوچ ظاہر کرنے والے شخص کی جونیئر نیشنل پلیئر کے ساتھ زیادتی         خلیج بحران : چین نے ثالثی کی پیشکش کردی ، امید ہے بات چیت سے مسائل حل ہونگے : قطر         ”اپنے عہد میں کبھی امریکا نہیں جاﺅنگا “، فلپائن کے صدر نے ڈونلڈ ٹرمپ کی دعوت مسترد کر دی         نوجوان لڑکے نے اپنی گرل فرینڈکی برہنہ تصاویر فحش ویب سائٹ پر اپ لوڈ کر دیں ،پولیس نے گرفتار کر لیا         ’’ڈنمارک میں پاکستان کا تشخص قائم کرنا ہماری ذمہ داری ہے‘‘ڈینش پاکستانی افئر سوسائٹی         راہ چلتی معروف ٹی وی اینکر پر درخت گر گیا اور پھر۔۔۔انتہائی افسوسناک خبرآگئی         اسمبلیاں تحلیل کرنے کے حامی نہیں، حکومت کو اپنی مدت پوری کرنی چاہئے، نواز شریف آج رات تک فیصلہ کر لیں، خورشید شاہ        
news-1495179202-5735_large

’وہ گاؤں جہاں رہنے والے مردوں سے کوئی لڑکی شادی کرنے کو تیارنہیں کیونکہ ۔ ۔ ۔‘

شادی عمومی طورپر زندگی میں ایک ہی بار ہوتی ہے اور اس مقدس بندھن کے لیے زندگی کی آسائشوں اور بہتر سے بہتر رشتہ دیکھا جاتاہے لیکن بھارتی ریاست اتر پردیش کے ایک گاؤں میں پانی سمیت زندگی کی بنیادی سہولیت ہی میسر نہ ہونے کی وجہ سے وہاں کے مردوں کیساتھ کوئی لڑکی شادی کرنے کو تیار نہیں ۔
ہندوستان ٹائمز کے مطابق اتر پردیش کے گاؤں شری تاراماجرا میں کوئی دوسرے علاقوں کی عورت شادی کرنے کو تیار نہیں اور اسے ’کنواروں کا گاؤں ‘ بھی کہا جاتاہے کیونکہ یہاں آج بھی پانی کی قلت ہے اور زیرزمین انتہائی گہرائی میں موجود پانی بھی استعمال کے قابل نہیں، آج بھی اس گاؤں میں بجلی جیسی سہولت بھی دستیاب نہیں جس کی وجہ سے ممکنہ دلہنیں اس گاؤں کے مکینوں سے شادی کرنے کو تیار نہیں ۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ نہ صرف 35کلومیٹر دور الہ آباد کی مکین بلکہ نواحی اضلاع پراتاپھگڑھ ، کوشمبی اور چتراکوٹ جیسے علاقوں کی خواتین بھی اس گاؤں کے نوجوانوں کی شادی کی تجویز مسترد کردیتی ہیں کیونکہ ان نوجوانوں سے شادی کرنے کا مطلب اپنی زندگی کو مزید مشکلات میں ڈالنا ہے ۔
گاؤں کی مجموعی آباد ی تقریباً ایک ہزار نفوس پر مشتمل ہے اور18سے 29سال کے 50افراد کو اب بھی دلہنوں کی تلاش ہے ۔ویڈیو بھی دیکھ سکتے ہیں

کمنٹ کریں - Leave Comments

آپ کا ای میل خفیہ رکھا جائے گا۔ تمام فیلڈ فل کرنا ضروری ہیں۔ Your Email will never published. *

*