تازہ ترین
آپریشن خیبر4مکمل ، راجگال اور شوال میں زمینی اہداف حاصل کرلیے ہیں: ڈی جی آئی ایس پی آر         ہماری خفیہ ایجنسیزاتنی قابل ہیں کہ وہ کوئی بھی معلومات کہیں سے بھی نکال سکتی ہیں:میجر جنرل آصف غفور         پاک فو ج نے 2013میں سنی مسجد پر حملہ کرنے والے دہشتگردوں کا نیٹ ورک پکڑ لیا ،اعترافی بیان جاری         ارفع کریم ٹاور بم دھماکے کا اصل ہدف وزیر اعلیٰ پنجاب تھے، عین موقع پر دہشت گردوں نے پولیس نوجوانوں پر حملہ کیا: ڈی جی آئی ایس پی آر         جشن آزادی کی تقریبات پر بڑے حملوں کو پاک فوج نے کیسے ناکام بنایا؟ڈی جی آئی ایس پی آر نے خوفناک حقیقت بیان کردی         کیریئر میں فضائی انجینئر بننا چاہتی تھی: پریانکا چوپڑا         وزیر اعلی پنجاب شہبازشریف کی طرف سے عمران خان کو 10ارب روپے ہرجانے کیس کی سماعت،عمران خان کو جواب داخل کروانے کے ایک بار پھر 9ستمبر تک کا وقت دے دیا گیا         فوج اورسویلین کوئی تقسیم نہیں ہے:میجر جنرل آصف غفور         ڈان لیکس رپورٹ کھولنا حکومت کی صوابدید ہے : میجر جنرل آصف غفور         پرویز مشرف 4دہائیوں تک فوج میں رہے ہیں، ان کے فوج کے حوالے سے بیانات ذاتی تجربہ ہیں: میجر جنر ل آصف غفور        
news-1502478154-2148_large

بھارت: ہسپتال میں آکسیجن کی سپلائی بند ہونے سے 48گھنٹوں میں 30بچے موت کی وادی میں چلے گئے

انڈیا کی ریاست اترپردیش کے ضلع گورکھپور کے بی آر ڈی میڈیکل کالج میں مبینہ طور پر آکسیجن کی سپلائی بند ہو جانے سے 30 بچوں ہلاک ہو گئے،آکسیجن کی بندش کی وجہ آکسیجن سلنڈر مہیا کرنے والے ٹھیکیدار کو اس کے 69لاکھ واجبات کی عدم ادائیگی کی وجہ بتائی جا رہی ہے ۔
بھارتی خبر رساں ایجنسی کے مطابق ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ راجیو روتیلا کے حوالے سے کہا ہے کہ گذشتہ 48 گھنٹوں میں مختلف وجوہات کی وجہ سے 30 بچے ہلاک ہو گئے ہیں۔اتر پردیش کی حکومت کے ٹوئٹر ہینڈل سے کیے گئے ٹویٹس میں ہسپتال میں آکسیجن کی کمی کی وجہ سے مریضوں کی موت کی خبر کو گمراہ کن کہا گیا ہے۔

یوپی کی حکومت کے ٹوئٹر ہینڈل کی ٹویٹس میں کہا گیا ہے کہ گورکھپور کے بی آر ڈی میڈیکل کالج میں آکسیجن کی کمی سے کسی مریض کی موت نہیں ہوئی ہے۔ایک اور ٹویٹ میں کہا گیا ہے کہ کچھ چینلز پر چلائی گئی آکسیجن کی کمی سے گذشتہ چند گھنٹوں میں ہسپتال میں داخل بہت سے مریضوں کی موت کی خبر گمراہ کن ہے۔یہ بھی کہا گیا ہے کہ ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ ہسپتال میں موجود ہیں اور صورتحال پر نظر رکھے ہوئے ہیں۔اس سے پہلے گورکھپور کے ہی چیف میڈیکل آفیسر ڈاکٹر رویندر کمار نے بی بی سی کو بتایا کہ مرنے والے بچوں کی تعداد تقریباً 20 ضرور ہے لیکن ان کی موت کی وجہ آکسیجن کی سپلائی کا بند ہونا نہیں ہے۔گورکھپور میڈیکل کالج کے اس وارڈ میں ہر سال ہزاروں کی تعداد میں دماغ کی سوزش کے مریض آتے ہیں اور ان میں سے بہت سے مریضوں کی موت ہو جاتی ہے۔ ان میں سے زیادہ تر بچے ہوتے ہیں۔

کمنٹ کریں - Leave Comments

آپ کا ای میل خفیہ رکھا جائے گا۔ تمام فیلڈ فل کرنا ضروری ہیں۔ Your Email will never published. *

*